9

افغانستان سے سرحد پار سے فائرنگ کے نتیجے میں 5 فوجی شہید

سیکیورٹی فورسز کے اہلکاروں کی اے ایف پی فائل فوٹو۔
سیکیورٹی فورسز کے اہلکاروں کی اے ایف پی فائل فوٹو۔
  • انٹیلی جنس کے مطابق پاک فوج کی جوابی کارروائی میں دہشت گردوں کو بھاری جانی نقصان پہنچا۔
  • پاکستان توقع کرتا ہے کہ طالبان حکومت “مستقبل میں ایسی سرگرمیوں کی اجازت نہیں دے گی۔”
  • پاک فوج دہشت گردی کے خلاف ملک کی سرحدوں کے دفاع کے لیے پرعزم ہے۔

انٹر سروسز پبلک ریلیشنز (آئی ایس پی آر) نے ایک بیان میں کہا کہ کرم ضلع میں تعینات پاکستانی فوجیوں پر دہشت گردوں کے افغانستان سے سرحد پار سے حملے کے بعد کم از کم پانچ فوجی شہید ہو گئے۔

فوج کے میڈیا ونگ نے کہا کہ پاکستانی فوجیوں نے حملے کا بھرپور جواب دیا، انہوں نے مزید کہا کہ “انٹیلی جنس رپورٹس” کے مطابق “دہشت گردوں کو بھاری جانی نقصان اٹھانا پڑا”۔

مزید پڑھ: افغانستان سے سرحد پار سے حملے میں پاک فوج کے دو جوان شہید

فائرنگ کے تبادلے میں شہید ہونے والوں میں 34 سالہ لانس نائیک عجب نور (سکن کراچی)، 22 سالہ سپاہی ضیاء اللہ خان (سکن لکی مروت)، 23 سالہ سپاہی ناہید اقبال شامل ہیں۔ (کرک کا رہائشی)، 18 سالہ سپاہی سمیر اللہ خان (ساکن بنوں) اور 27 سالہ سپاہی ساجد علی (رہائشی بہاولنگر)۔

آئی ایس پی آر نے حملے کے جواب میں کہا کہ ’’پاکستان دہشت گردوں کی جانب سے افغان سرزمین کو پاکستان کے خلاف سرگرمیوں کے لیے استعمال کرنے کی شدید مذمت کرتا ہے اور توقع کرتا ہے کہ عبوری افغان حکومت مستقبل میں پاکستان کے خلاف ایسی سرگرمیوں کی اجازت نہیں دے گی‘‘۔

مزید پڑھ: کرم میں افغان سرحد پر دہشت گردوں کی دراندازی کی کوشش ناکام بناتے ہوئے دو فوجی جوان شہید ہوگئے۔

بیان میں مزید کہا گیا کہ پاکستانی فوج دہشت گردی کے خلاف ملک کی سرحدوں کے دفاع کے لیے پرعزم ہے اور اس طرح کی “قربانیاں” ان کے عزم کو مزید مضبوط کریں گی۔

شیخ رشید نے افغان طالبان پر زور دیا کہ وہ دہشت گردی پر قابو پانے کا وعدہ پورا کریں۔

وزیر داخلہ شیخ رشید احمد نے ایک بیان میں حملے کی مذمت کرتے ہوئے طالبان حکومت پر زور دیا کہ وہ سرحد پار دہشت گردی پر قابو پانے کے اپنے وعدے کو “پورا” کرے۔

وزیر داخلہ نے کہا کہ ہم سیکیورٹی فورسز کی قربانیوں کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں، انہوں نے مزید کہا کہ سیکیورٹی فورسز کی وطن کے لیے دی گئی قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں