17

عمران خان کے خلاف غداری کا مقدمہ درج کرنے میں دلچسپی نہیں، خاقان عباسی

  • خاقان عباسی کا کہنا ہے کہ یہ سیاست کا وقت نہیں ہے کیونکہ ملک کو غیر معمولی حالات کا سامنا ہے۔
  • سابق وزیراعظم کا کہنا ہے کہ ن لیگ نے ہمیشہ ملکی مفاد کو ترجیح دی ہے۔
  • ان کا کہنا ہے کہ مخلوط حکومت اپنی آئینی مدت پوری کرے گی اور کمزور معیشت کو مستحکم کرے گی۔

اسلام آباد: سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ (ن) کے سینئر رہنما شاہد خاقان عباسی نے جمعہ کو کہا کہ وہ پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان کے خلاف غداری کا مقدمہ درج کرنے میں دلچسپی نہیں رکھتے۔

ان کا یہ بیان ایک دن بعد آیا جب کابینہ کی خصوصی کمیٹی کے اجلاس میں عمران خان اور پی ٹی آئی کے دیگر رہنماؤں کے خلاف ’آزادی مارچ‘ کے دوران کیے گئے تشدد اور نفرت انگیز تقاریر کے سلسلے میں غداری کے مقدمات درج کرنے پر غور کیا گیا۔

پر خطاب کرتے ہوئے جیو نیوز پروگرام آج شاہ زیب خانزادہ کے ساتھخاقان عباسی نے کہا کہ وہ سیاسی حریفوں کو غدار قرار دینے کے کھیل میں نہیں پڑنا چاہتے۔

مسلم لیگ ن کے رہنما نے کہا کہ میں نے غداری کیس کے بارے میں نہیں سنا، تاہم سب جانتے ہیں کہ صدر عارف علوی، عمران خان اور ان کے دیگر ساتھیوں نے آئین توڑا ہے۔

عمران خان کی حکومت میں اپوزیشن کے ہر رہنما کو جعلی مقدمات میں گرفتار کیا گیا لیکن ہم سیاسی حریفوں کے خلاف غداری کے مقدمات درج کرانے کے ایسے کھیل میں نہیں الجھنا چاہتے کیونکہ ملکی معیشت کو مستحکم کرنا ہمارے سامنے بڑا چیلنج ہے۔ اس نے شامل کیا.

کے حکومتی فیصلے کا دفاع پٹرول کی قیمتوں میں اضافہعباسی نے مزید کہا کہ یہ کسی مقبول یا غیر مقبول فیصلے سے متعلق نہیں، یہ ملک کے مستقبل سے متعلق ہے اور مسلم لیگ (ن) نے ہمیشہ ملکی مفاد کو ترجیح دی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ “حکومت صرف پٹرول کی قیمتوں پر سبسڈی ختم کر رہی ہے کیونکہ کوئی بھی ملک قیمت خرید سے کم پٹرول فروخت کرنے کا متحمل نہیں ہو سکتا۔”

سابق وزیر اعظم نے کہا کہ سیاسی پوائنٹ سکورنگ کے لیے عمران خان کی نگرانی میں ملکی معیشت کو ڈوبتے دیکھنا ان کے لیے بہت آسان تھا لیکن انھوں نے فیصلہ کیا اور اب وہ اپنی مدت پوری کر کے کمزور معیشت کو مستحکم کریں گے۔

یہ پوچھے جانے پر کہ کیا موجودہ حکومت اگلے سال تک برقرار رہے گی کیونکہ عمران خان دباؤ بڑھا رہے تھے اور اداروں پر اتحادی حکومت کو ہٹانے میں مداخلت کرنے پر زور دے رہے تھے، مسلم لیگ (ن) کے رہنما نے کہا کہ خان پہلے اپنی چار سالہ حکومت کی کارکردگی کی وضاحت کریں۔

انہوں نے کہا کہ یہ وقت سیاست کا نہیں ہے کیونکہ ملک کو غیر معمولی حالات کا سامنا ہے تاہم عمران خان کو سیاست کرنے سے کچھ حاصل نہیں ہوگا۔

عباسی کا وزیراعظم کو سیاسی مذاکرات شروع کرنے کا مشورہ

ملک میں جاری معاشی بحران اور کشیدہ سیاسی ماحول کے پیش نظر شاہد خاقان عباسی نے وزیراعظم شہباز شریف کو مشورہ دیا کہ وہ ملک کو حالات سے نکالنے کے لیے سیاسی مذاکرات شروع کریں۔

نجی ٹی وی کو انٹرویو دیتے ہوئے خاقان عباسی نے کہا کہ وزیر اعظم شہباز شریف تمام سیاسی جماعتوں کو جلد سے جلد سیاسی اتفاق رائے پیدا کرنے کی دعوت دیں۔

انہوں نے سوال کیا کہ کیا گالی گلوچ اور لوگوں کو حملوں پر اکسانے سے ملک کا نظام چلانے میں مدد ملے گی۔

عباسی نے کہا کہ ملکی معاملات کو چلانے کے لیے بات چیت ہونی چاہیے۔

انہوں نے مشورہ دیا کہ تمام سیاسی جماعتیں مل بیٹھیں، اصول طے کریں اور ملک میں سیاسی نظام کے لیے راستہ بنائیں۔

مسلم لیگ (ن) کے رہنما نے خدشہ ظاہر کیا کہ معاشی بحران کے دوران سیاسی قیادت اتفاق رائے پر پہنچنے میں ناکام رہی تو ملک کو نقصان ہوگا۔ انہوں نے سیاسی قیادت پر زور دیا کہ ان کی ذاتی انا کو قومی مفاد پر غالب نہیں آنا چاہیے۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں