23

علمائے کرام نے مسجد نبوی کے تقدس کو پامال کرنے کی مذمت کی ہے۔

مرکزی علماء کونسل پاکستان کے چیئرمین صاحبزادہ زاہد محمود قاسمی، صدر ملی یکجہتی کونسل و جمعیت علماء پاکستان صاحبزادہ عبدالخیر محمد زبیر، امیر متحدہ جمعیت اہل حدیث پاکستان علامہ ضیاء اللہ شاہ بخاری نے خطاب کیا۔  - اسکرین گریب
مرکزی علماء کونسل پاکستان کے چیئرمین صاحبزادہ زاہد محمود قاسمی، صدر ملی یکجہتی کونسل و جمعیت علماء پاکستان صاحبزادہ عبدالخیر محمد زبیر، امیر متحدہ جمعیت اہل حدیث پاکستان علامہ ضیاء اللہ شاہ بخاری نے خطاب کیا۔ – اسکرین گریب

کراچی: تمام مکاتب فکر سے تعلق رکھنے والے معروف مذہبی اسکالرز نے جمعہ کو مدینہ منورہ میں مسجد نبوی (ص) کے تقدس کی پامالی کی مذمت کی ہے۔

ایک روز قبل وزیراعظم شہباز شریف اور ان کا وفد سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز کی دعوت پر تین روزہ سرکاری دورے پر سعودی عرب پہنچے تھے۔

وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری، وزیر دفاع خواجہ آصف، وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل، وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب، شاہ زین بگٹی، محسن داوڑ، خالد مقبول صدیقی، چوہدری سالک اور وزیر اعظم شہباز شریف کے عملے کے چار ارکان بھی وزیراعظم کے ہمراہ ہیں۔ دورہ

تاہم جب وزیر نارکوٹکس کنٹرول شاہ زین بگٹی اور وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب نے مسجد نبوی کا دورہ کیا تو ان کا استقبال “چور، چور” کے نعروں سے کیا گیا اور مریم اورنگزیب کے خلاف ہراساں اور قابل اعتراض نعرے لگائے گئے۔

اس دوران مظاہرین نے جے ڈبلیو پی کے سربراہ شاہ زین بگٹی کے ساتھ بھی بدتمیزی کی اور ان کے بال کھینچے۔ مظاہرین اپنے موبائل فونز سے اس پورے واقعہ کی فلم بندی کرتے رہے۔

واقعے کے بعد تمام مکاتب فکر کے علمائے کرام نے واقعے کی مذمت کی اور اس پر اپنے خیالات کا اظہار بھی کیا۔

مرکزی علماء کونسل پاکستان کے چیئرمین صاحبزادہ زاہد محمود قاسمی کا کہنا تھا:

صدر ملی یکجہتی کونسل اور جمعیت علمائے پاکستان صاحبزادہ عبدالخیر محمد زبیر نے بھی واقعہ کی مذمت کی ہے۔

امیر متحدہ جمعیت اہل حدیث پاکستان علامہ ضیاء اللہ شاہ بخاری نے بھی واقعہ کی مذمت کی ہے۔

شیعہ علماء کونسل کے نائب صدر علامہ عارف حسین واحدی کا کہنا تھا:

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں