16

عدالت نے راشد شفیق کو 14 روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا۔

بدھ کو مقامی عدالت نے جسمانی ریمانڈ میں توسیع کی درخواست مسترد کرتے ہوئے سابق وزیر داخلہ اور عوامی مسلم لیگ (اے ایم ایل) کے سربراہ شیخ رشید کے بھتیجے شیخ راشد شفیق کو 14 روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا۔

شیخ رشید کے بھتیجے اور رکن قومی اسمبلی (ایم این اے) شیخ راشد شفیق کو دو روزہ جسمانی ریمانڈ مکمل ہونے پر اٹک کی مقامی عدالت میں پیش کیا گیا۔

ضلعی عدالت کے مرکزی دروازے پر پولیس کی بھاری نفری تعینات تھی جب کہ داخلی اور خارجی راستوں کو مکمل طور پر سیل کردیا گیا تھا اور پی ٹی آئی کے کارکنان بھی وہاں پہنچے اور نعرے بازی کی۔

دوران سماعت عدالت نے اپنا موبائل فون نہ ملنے پر برہمی کا اظہار کیا جس پر پولیس نے عدالت کو بتایا کہ ایم این اے نے اپنا موبائل فون سعودی عرب میں چھوڑ دیا۔

عدالت نے پولیس کو ای ایم ای آئی نمبر ٹریس کرکے دوپہر 2 بجے تک ریکارڈ عدالت میں پیش کرنے کا حکم دیا تاہم پولیس ریکارڈ پیش کرنے میں ناکام رہی۔

عدالت نے پولیس کی جانب سے شفیق کے جسمانی ریمانڈ میں توسیع کی استدعا مسترد کرتے ہوئے اسے جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا۔

راشد شفیق کی عدالت میں پیشی کے موقع پر سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے تھے۔ پولیس نے ضلعی عدالت کو مکمل طور پر سیل کر دیا۔ عدالت کے مرکزی دروازے پر مسلح پولیس کے دستے بھی تعینات تھے۔ وکلا کو بھی عدالت کے اندر جانے میں شدید دشواری کا سامنا کرنا پڑا۔

.

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں