13

ظواہری کے قتل میں پاکستانی سرزمین کے استعمال کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا، ڈی جی آئی ایس پی آر

ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار۔  - اے پی پی/فائل
ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار۔ – اے پی پی/فائل
  • آئی ایس پی آر کا کہنا ہے کہ مہم سے شہدا کے خاندانوں میں شدید غم و غصہ ہے۔
  • اس میں مزید کہا گیا ہے کہ تکلیف دہ اور تضحیک آمیز تبصرے “ناقابل قبول اور انتہائی قابل مذمت” ہیں۔
  • بلوچستان میں ہیلی کاپٹر حادثے میں پاک فوج کے 6 اہلکار شہید ہوگئے۔

انٹر سروسز پبلک ریلیشنز کے ڈائریکٹر جنرل میجر جنرل بابر افتخار نے جمعہ کو ڈرون حملے میں پاکستان کی فضائی حدود کے استعمال سے متعلق افواہوں پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ القاعدہ کے رہنما ایمن الظواہری کی ہلاکت پر کوئی سوال نہیں ہے۔ ظواہری کے قتل میں پاکستانی سرزمین کا۔

وزارت خارجہ نے ایمن الظواہری کے حوالے سے واضح بیان جاری کیا ہے۔ یہ ناممکن ہے کہ اس کے لیے پاکستان کی سرزمین استعمال کی گئی ہو۔‘‘ انہوں نے مزید کہا کہ بغیر کسی ثبوت کے غیر متعلقہ تبصرے کیے جاتے ہیں۔

ہیلی کاپٹر کے حادثے کے بعد شروع ہونے والے سوشل میڈیا پر منفی پروپیگنڈے کی مذمت کرتے ہوئے ڈائریکٹر جنرل نے کہا: “ہم یکم اگست کو ہونے والے حادثے کے بعد سے پریشان ہیں۔

اس بات پر زور دیتے ہوئے کہ ایسا نہیں ہونا چاہیے، جنرل بابر نے کہا کہ منفی پروپیگنڈہ اور افواہیں پھیلانے والے عناصر کو مسترد کیا جانا چاہیے۔

انہوں نے زور دے کر کہا کہ “غیر حساس رویہ ناقابل قبول ہے اور اس کی ہر پلیٹ فارم پر مذمت کی جانی چاہیے،” انہوں نے مزید کہا کہ پاک فوج قوم کی شکر گزار ہے جو ان اور شہداء کے ساتھ کھڑی ہے۔

ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ بھارت کی جانب سے آرٹیکل 370 کو منسوخ کیے جانے کے بعد غیر قانونی طور پر مقبوضہ جموں و کشمیر کی خصوصی خود مختار حیثیت ختم ہونے کے تین سال بعد پاکستانی فوج کشمیر کے عوام کے ساتھ کھڑی ہے۔

انہوں نے کہا کہ کشمیر کا مسئلہ حل ہونا چاہیے اور ہم اس کے لیے ہر پلیٹ فارم پر کام کریں گے۔

ہیلی کاپٹر حادثے کے شہداء کو سپرد خاک کر دیا گیا۔

منگل کو بلوچستان میں ہیلی کاپٹر حادثے کے شہداء کو راولپنڈی میں پورے فوجی اعزاز کے ساتھ سپرد خاک کر دیا گیا۔

لیفٹیننٹ جنرل سرفراز علی، میجر جنرل امجد حنیف اور بریگیڈیئر محمد خالد کی نماز جنازہ آرمی قبرستان میں ادا کر دی گئی۔

نماز جنازہ میں وزیراعظم شہباز شریف، چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی، وفاقی وزراء، آزاد جموں و کشمیر کے وزیراعظم، غیر ملکی معززین اور سینئر حاضر سروس، ریٹائرڈ فوجی اور سول حکام اور شہداء کے لواحقین کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں