14

طلبہ یونینز پر پابندی ختم

38 سال کی پابندی کے بعد سندھ طلبہ یونینز کو قانونی حیثیت دینے والا ملک کا پہلا صوبہ بن گیا ہے۔ جمعہ کو اس نے صوبے کے تعلیمی اداروں میں طلبہ یونینز پر پابندی ختم کرنے کے بل کی منظوری دی۔

جب کہ صوبہ بھر سے بہت سی طلبہ تنظیموں نے اس پیشرفت کا خیرمقدم کیا اور اسے ایک “تاریخی اقدام” قرار دیا، دوسروں نے بل کے نفاذ کی غیر یقینی صورتحال کی وجہ سے اپنے تحفظات کا اظہار کیا۔

سابق فوجی حکمران جنرل ضیاء الحق نے 38 سال قبل طلبہ یونینز پر پابندی عائد کر دی تھی جس کے تحت نوجوان علم کے متلاشی افراد کو اپنا حق استعمال کرنے سے روک دیا گیا تھا۔

طلبہ یونینز کیسے چلیں گی؟ Geo.tv وضاحت کرتا ہے کہ نیا قانون کیا ہوگا۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں