19

شیریں مزاری کا رانا ثناء اللہ کی بطور وزیر داخلہ تقرری پر اقوام متحدہ کے حقوق کے سربراہ کو خط

اقوام متحدہ کی ہائی کمشنر برائے انسانی حقوق مشیل بیچلیٹ، وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ اور پی ٹی آئی رہنما شیریں مزاری۔  — اے ایف پی/پی پی آئی فائل
اقوام متحدہ کی ہائی کمشنر برائے انسانی حقوق مشیل بیچلیٹ، وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ اور پی ٹی آئی رہنما شیریں مزاری۔ — اے ایف پی/پی پی آئی فائل
  • شیریں مزاری نے اقوام متحدہ کے حقوق مشیل بیچلیٹ کو آگاہ کیا کہ حکومت نے “دہشت گرد گروپوں کے اتحادی” کو وزیر داخلہ مقرر کیا ہے۔
  • پی ٹی آئی رہنما کا دعویٰ ہے کہ رانا ثناء اللہ اپنے سیاسی حریفوں کے خلاف ’’مذہب کارڈ‘‘ استعمال کر رہے ہیں۔
  • وزیر مملکت برائے پیٹرولیم ڈاکٹر مصدق ملک کا کہنا ہے کہ مزاری نے خط نہیں لکھا بلکہ پی ٹی آئی کو بچانے کے لیے اقوام متحدہ کو ’اپیل‘ بھیجی ہے۔

اسلام آباد: پی ٹی آئی رہنما شیریں مزاری نے رانا ثناء اللہ کو وزیر داخلہ بنانے کے حکومتی فیصلے پر اقوام متحدہ کی ہائی کمشنر برائے انسانی حقوق مشیل بیچلیٹ کو خط لکھا ہے۔

مزاری، جو گزشتہ حکومت میں انسانی حقوق کے وزیر تھے، نے دعویٰ کیا ہے کہ شہباز شریف کی قیادت والی حکومت نے “دہشت گرد گروہوں کے اتحادی” اور ایک مبینہ قاتل کو وزیر داخلہ مقرر کیا ہے۔

پی ٹی آئی رہنما نے یہ بھی دعویٰ کیا ہے کہ ثناء اللہ، جو ماڈل ٹاؤن کیس میں “ملزم” ہیں، اپنے سیاسی حریفوں کے خلاف “مذہب کارڈ” استعمال کر رہے ہیں۔

وزیر مملکت برائے پیٹرولیم ڈاکٹر مصدق ملک نے اس معاملے پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ مزاری نے خط نہیں لکھا بلکہ پی ٹی آئی کو بچانے کے لیے اقوام متحدہ کو ’اپیل‘ بھیجی ہے۔

امریکہ سازش کر رہا ہے اور اقوام متحدہ کو درخواست بھیج دی گئی ہے۔ واہ، کیا سازش ہے،” وزیر نے کہا۔ انہوں نے یہ بھی سوال کیا کہ پی ٹی آئی کے رہنما اقوام متحدہ سے کس بنیاد پر “اپیل” کر رہے ہیں۔

عمران خان کو تحریک عدم اعتماد کے ذریعے ہٹائے جانے کے بعد گزشتہ ماہ شہباز شریف نے وزیر اعظم کا حلف اٹھایا تھا۔

اپنے حلف کے بعد وزیراعظم شہباز شریف نے اپنی کابینہ میں 33 افراد کو شامل کیا، ان میں رانا ثناء اللہ بھی شامل ہیں۔

ثناء اللہ کو حلف اٹھانے کے بعد وزیر داخلہ بنا دیا گیا۔

ان کے عہدے پر فائز ہونے کے بعد سے پی ٹی آئی نے دعویٰ کیا ہے کہ موجودہ حکومت ان کے خلاف مہم چلائے گی۔ تاہم مخلوط حکومت کی قیادت کرنے والی مسلم لیگ (ن) نے ایسا کرنے کی تردید کی ہے۔

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں