27

شیریں مزاری بطور خاتون قابل احترام ہیں، حمزہ شہباز

وزیراعلیٰ پنجاب حمزہ شہباز نے سابق وفاقی وزیر اور پی ٹی آئی کی سینئر رہنما شیریں مزاری کو پنجاب کے محکمہ اینٹی کرپشن کی جانب سے گرفتار کیے جانے کے چند گھنٹے بعد فوری رہا کرنے کا حکم دیا ہے۔

اطلاعات کے مطابق سابق وزیر انسانی حقوق کو ضلع راجن پور میں زمین کے ایک ٹکڑے پر قبضے سے متعلق کیس میں حراست میں لیا گیا۔

حمزہ نے ایک بیان میں کہا، “بطور عورت، شیریں مزاری قابل احترام ہیں۔ کسی بھی خاتون کو گرفتار کرنا ہماری معاشرتی اقدار کے مطابق نہیں ہے۔” “اگر تفتیش کے نتیجے میں گرفتاری ناگزیر ہو جائے تو قانون کو اپنا راستہ اختیار کرنا چاہیے۔”

انہوں نے مزید کہا کہ مزاری کو گرفتار کرنے والے اینٹی کرپشن اہلکاروں کے خلاف تحقیقات شروع کی جائیں۔ انہوں نے کہا، “مسلم لیگ ن ایک سیاسی جماعت کے طور پر خواتین کے احترام پر یقین رکھتی ہے۔”

پی ٹی آئی رہنما کے خلاف مقدمہ ڈپٹی کمشنر راجن پور کی درخواست پر درج کیا گیا جس کے بعد اینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ پنجاب نے ایف آئی آر درج کی۔

مزاری پر زمین کے ایک ٹکڑے پر قبضہ کرنے کا الزام ہے۔ اس کے خلاف 11 مارچ 2022 کو شکایت درج کروائی گئی تھی، جبکہ اے سی راجن پور کو معاملے کی انکوائری کرنے کی ہدایت کی گئی تھی۔

متعلقہ اہلکار نے 8 اپریل کو کیس کی رپورٹ تیار کی اور اس کی روشنی میں اینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ نے اپنے رولز 2014 کے تحت فوجداری مقدمہ درج کیا۔

گرفتاری کے بعد، پی ٹی آئی نے اسلام آباد ہائی کورٹ (IHC) سے رجوع کیا اور آج کے بعد ملک گیر احتجاج کرنے کا اعلان کیا۔

.

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں