23

رانا ثناء اللہ مسجد نبوی کے واقعہ پر عمران خان کو گرفتار کریں گے۔

وفاقی وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ نے اتوار کے روز اس عزم کا اظہار کیا کہ سابق وزیراعظم عمران خان کو اس ہفتے کے شروع میں مسجد نبوی میں آنے والے وزیراعظم شہباز شریف اور ان کے وفد کے خلاف غنڈہ گردی اور نعرے بازی سے متعلق کیس میں گرفتار کیا جائے گا۔

ایک بیان میں ثناء اللہ نے عمران خان کو ’فتنہ‘ قرار دیتے ہوئے کہا کہ ’انہوں نے جو کیا اس پر انہیں ہرگز معاف نہیں کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان کو ضرور گرفتار کیا جائے گا۔

عمران خان سمیت تقریباً 150 افراد کے خلاف درج ایف آئی آر کا حوالہ دیتے ہوئے وزیر نے کہا کہ روضہ رسول (ص) کی حرمت کو پامال کرنے والوں کے خلاف مقدمہ درج نہ کرنے کا کوئی جواز نہیں ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اگر کوئی شہری آگے آئے اور اس سلسلے میں کارروائی کی کوشش کرے تو حکومت کوئی رکاوٹ پیدا نہیں کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ مسجد نبوی میں مسلم لیگ (ن) کے رہنماؤں کو ہراساں کرنے سے متعلق واقعہ پہلے سے منصوبہ بند تھا، انہوں نے مزید کہا کہ لوگوں کو ایسا کرنے پر اکسایا گیا۔

انہوں نے کہا کہ منصوبہ بندی کے مطابق، انیل مسرت اور صاحبزادہ جہانگیر کی سربراہی میں لوگوں کا ایک گروپ مسجد نبوی میں غنڈہ گردی کے لیے برطانیہ سے سعودی عرب پہنچا۔

“یہ آدمی [Imran Khan] نئی نسل کو گمراہ کرنے پر تلا ہوا ہے،” انہوں نے کہا اور پوچھا کہ کیا کبھی کسی نے چاند رات پر احتجاج کی کال دی؟

واقعے کے پیچھے سازش کے بارے میں بات کرتے ہوئے وزیر نے سوال کیا کہ کیا شیخ رشید کی پریس کانفرنس کے بعد ثبوت کی ضرورت ہے؟

.

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں