29

اسلام آباد ہائی کورٹ نے عمر امین گنڈا پور کو نااہل قرار دینے کا الیکشن کمیشن کا حکم معطل کردیا۔

اسلام آباد ہائی کورٹ (آئی ایچ سی) نے منگل کو الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) کی جانب سے وفاقی وزیر علی امین گنڈا پور کے بھائی عمر امین گنڈا پور کی نااہلی سے متعلق جاری کیا گیا حکم نامہ معطل کردیا۔

ای سی پی نے عمر امین گنڈا پور کو آئندہ بلدیاتی انتخابات میں ڈیرہ اسماعیل خان کے میئر کے عہدے کے لیے انتخاب لڑنے سے روک دیا تھا جس کے بعد انہوں نے آج آئی ایچ سی میں اس حکم نامے کو چیلنج کیا۔

عمر نے ای سی پی کے فیصلے کو کالعدم قرار دینے کے فیصلے کے خلاف IHC میں درخواست دائر کی کیونکہ یہ سمری انکوائری کے بغیر کیا گیا تھا اور اس لیے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کی تھی۔

سماعت کے دوران عمر کے وکیل علی ظفر نے استدعا کی کہ الیکشن کمیشن کیس میں شفافیت کے تقاضے پورے کرنے میں ناکام رہا، انہوں نے مزید کہا کہ امیدوار کو شک کا فائدہ دیا جانا چاہیے تھا۔

ان کا موقف تھا کہ کوئی نوٹس نہیں دیا گیا اور ساری تفتیش علی کے خلاف تھی لیکن حکم عمر کے خلاف دیا گیا تھا۔

درخواست میں الیکشن کمیشن آف پاکستان، چیف الیکشن کمشنر، ریجنل الیکشن کمشنر اور سینیٹر کامران مرتضیٰ کو بھی فریق بنایا گیا ہے۔

ظفر نے دلیل دی کہ ای سی پی نے کیس میں طریقہ کار پر عمل نہیں کیا، انہوں نے مزید کہا کہ اگر کوئی امیدوار قانون کے مطابق ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی میں ملوث پایا جاتا ہے تو اسے 50 ہزار روپے تک جرمانہ کیا جا سکتا ہے۔

آئی ایچ سی نے کہا کہ جہاں تک علی امین گنڈا پور کا تعلق ہے ای سی پی کا حکم میدان میں رہے گا۔

ادھر اسلام آباد ہائی کورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے ای سی پی کو نوٹس جاری کرتے ہوئے 11 فروری تک جواب طلب کر لیا، سماعت ملتوی کر دی گئی۔

.

Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں